اربعین واک کے حصے کے طور پر حیدرآباد کے دور دراز علاقوں سے ہزاروں مرد، خواتین اور بچے پیدل چلتے ہیں۔

حیدرآباد میں امام حسین کے چہلم کا جلوس ہفتہ کی سہ پہر قدمگاہ مولا علی سے شروع ہوا شام کو کربلا دادن شاہ پہنچ کر اختتام پذیر ہوا۔

اربعین واک کے ایک حصے کے طور پر حیدرآباد کے دور دراز علاقوں سے ہزاروں مرد، خواتین اور بچے پیدل چلے اور جلوس میں شامل ہونے کے لیے قدم گاہ میں جمع ہوئے۔

حیدرآباد پولیس نے بتایا کہ جلوس کے دوران سیکورٹی کے لیے 2000 سے زیادہ پولیس اہلکار تعینات کیے گئے تھے۔

سرکاری خبر رساں ایجنسی اے پی پی کے مطابق پولیس کے ترجمان نے بتایا کہ حیدرآباد میں مرکزی جلوس کے علاوہ 23 جلوس نکالے گئے۔

انہوں نے کہا کہ مرکزی جلوس کے روٹ کو ملانے والی تمام گلیوں کو سیل کر دیا گیا تھا اور قدم گاہ پر واک تھرو گیٹ لگائے گئے تھے۔

انہوں نے مزید کہا کہ میٹل ڈیٹیکٹر کی مدد سے باڈی سرچ بھی کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ حیدرآباد کے سینئر سپرنٹنڈنٹ آف پولیس امجد شیخ اور دیگر پولیس حکام نے جلوسوں کے سیکورٹی انتظامات کی نگرانی کی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *